برساتی جنگل کی حفاظت اور سماجی و ماحولیاتی اضافی قدر کے امور پر عالمی ماحول دوست فورم میں گفتگو

تقریب کے اختتام پر ایل آئی ڈی ای  کی جانب سے معاشرے کو قانون سازی کی پائیدار ترقی کو یقینی بنانے کے لیے متحرک کرنے کے معاہدے پر دستخط

ماناؤس، برازیل، 26 مارچ 2012ء / پی آر نیوز وائر /

سماجی اور ماحولیاتی سرگرم کارکن بیانکا جیگر نے ماناؤس میں تیسرے عالمی ماحول دوست فورم کے موقع پر “پائیدار ترقی اور انسانی حقوق” کے معاملے کو اجاگر کیا۔ انہوں نے کہا کہ ایمیزونیا  ایک غیر معمولی  خزانہ اور کثیر انواع  کا گھر  ہے اور  ہم پہلے ہی ایمیزون برساتی جنگلات کا کئی کلومیٹر  حصہ کھو چکے ہیں۔ بیانکا نے ماحول دوست توانائی میں سرمایہ کاری میں اپنی معاونت کا اظہار کیا۔ ” ہم نے ترقی کے نام پر موجودہ اور آنےوالی نسلوں کو قربان نہیں کر سکتے۔”

(تصویر: http://www2.prnewswire.com.br/imgs/pub/2012-03-25/original/640.jpg )

ایف اے ایس کے جنرل سپرنٹنڈنٹ ورجیلیو ویانا  نے “ریڈڈ +: کاروباروں اور برادریوں کے لیے ایک متبادل” کے موضوع پر گفتگو کی۔ امیزون کے جنگلات کی کٹائی کو روکنا کو وہ ایک چیلنج سمجھتے ہیں۔ “لوگ جنگلات کو اس لیے تباہ نہیں کر رہے کہ وہ بے وقوف ہیں بلکہ کیونکہ وہ ذہین اور منطقی ہیں اور اپنی زندگیوں کو بہتر بنانا چاہتے ہیں۔ منطق  یہ ہے کہ اقتصادی ترقی  جنگل کے حق میں کام کرے اور نا کہ اس کے خلاف۔”

پیٹر سوروئی پیوپل (رینڈونیا) کے سربراہ المیر سوروئی نے اپنے حصے میں کہا کہ “ماحول دوست معیشت اور برساتی جنگلات کے افراد” اشارہ کرتے ہیں کہ “عوامی اور نجی  پالیسیاں ویسے مقامی برادری تک نہیں پہنچتی جیسا ان تک پہنچنا چاہیے۔ سوروئی  نے ایمیزونیا  کے لیے ترقیاتی نمونے کی تخلیق میں حصہ لینے کے لیے تاجروں پر زور دیا۔

لیبل آسکلین کے بانی و صدر، آسکر میٹساواتٹ، فیشن ڈیزانر اور کاروباری شخصیت نے “ماحول دوستی اور شوق صنعت” کے بارے میں بات کی۔ جیسا کہ وہ دیکھتے ہیں، برازیل کے لوگوں کو اپنی زندگی بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔ “برازیل کو اقتصادی اعتبار سے ترقی کرنے کی ضرورت ہے اور  اس کے پاس پائیدار انداز میں منصفانہ تقسیم کے ساتھ ایک ترقی یافتہ ملک بننے کے وسیع مواقع ہیں۔” میٹساواٹ کے لیے ایک رکاوٹ ایک برانڈ کی منصوبہ بندی کی کمی ہے۔ “جب تک ہمارے پاس اضافی قدر نہ ہو ، ہم صرف اجناس فروشوں کے لئے، صرف خیرات کے بارے میں کرتے رہیں گے۔” “ہمیں یہ ظاہر کرنا ضروری ہے کہ ریاستہائے متحدہ امریکا سے آنے والی یا چین  کے سستے مزدوروں کے ذریعے بننے والی مشہور برانڈز  کے بجائے برازیل سے ماحول دوست مصنوعات خریدنا ضروری ہے۔”

ایل آئی ڈی ای – گروپو ڈی لائڈریس ایمپریساریاس (کاروباری راہنماؤں کے گروپ) – کے صدر جاون ڈوریا جونیئر  نے اختتام پر میثاق ایمیزون پڑھا۔ اس میں ایل آئی ڈی ای نے پائیدار ترقی کو یقینی بنانے کے لئے لازمی طور پر اس کے طریقہ کار کو تسلیم کرنے، قومی ماحولیاتی خدمات کے لئے ادائیگی قائم کرنے کے لئے قانون سازی کو منظور برازیلی معاشرے کو متحرک کرنے کے لیے ایک معاہدے پر دستخط کیے۔ انہوں نے اس سلسلے میں دیگر اہم معاملات پر بھی زور دیا۔ منشور کا مکمل متن یہاں دستیاب ہے: www.lidebr.com.br

سی ڈی این – کومیونی کو کوا کارپوریٹوا: erica.valerio@cdn.com.br، +55-11-8093-7156

Leave a Reply